54

مون سون بارشوں نے نئی دہلی کو ڈبودیا، سڑکیں، گھر اور گاڑیاں پانی میں ڈوب گئے

بھارت میں مون سون بارشوں نے جہاں شمالی ریاستوں میں تباہی مچارکھی ہے وہیں بھارتی دارالحکومت نئی دہلی بھی بارشوں اور سیلابی صورتحال سے بری طرح متاثر ہے۔

ریاست ہریانہ کی جانب سے دریا میں مزید پانی چھوڑ ا گیا ہے جس وجہ سے دریا میں پانی خطرناک لیول سے تین میٹر تک اوپر جاچکا ہے/ فوٹو پی ٹی آئی

بھارتی میڈیا کے مطابق مون سون کی بارشوں کے باعث نئی دہلی کی جمنا ندی میں پانی کی سطح خطرناک حد سے بھی تجاوز کرگئی اور دریا میں پانی کی مزید سطح میں اضافے کا امکان بھی ظاہر کیا گیا ہے

فوٹو رائٹرز

مسلسل بارشوں اور پانی کی آمد کی وجہ سے گزشتہ روز نئی دہلی کی جمنا ندی نے 45 سالہ ریکارڈ توڑا تھا جہاں پانی کی سطح 207.08 میٹر تک ریکارڈ کی گئی تھی تاہم اب بتایا جارہا ہے کہ آج صبح پانی کی سطح خطرناک حد سے بھی تجاوز کرتے ہوئے 208.46 میٹر تک پہنچ گئی ہے۔

بھارتی میڈیا کے مطابق نئی دہلی میں شدید بارشوں کے باعث متعدد علاقے زیر آب ہیں جب کہ ہریانہ کے ہتھنی بیراج کنڈ سے پانی چھوڑے جانا سیلابی صورتحال کی بنیادی وجہ بتائی گئی ہے تاہم ماہرین کا کہنا ہےکہ دہلی کو درپیش مسئلے کی کئی اور وجوہات بھی ہیں۔

نئی دہلی کے وزیر اعلیٰ کی جانب سے ہریانہ کو دریا میں پانی چھوڑنے سے منع کیا گیا  تھا تاہم ریاست ہریانہ کی جانب سے دریا میں مزید پانی چھوڑ ا گیا ہے جس وجہ سے دریا میں پانی خطرناک لیول سے تین میٹر تک اوپر جاچکا ہے۔

فوٹو پی ٹی آئی

بھارتی میڈیا کے مطابق شہر میں سیلابی صورتحال کی وجہ سے پینے کے پانی کے پلانٹ بند ہونے سے پانی کی بھی قلت ہوگئی ہے، شہر کی سڑکیں تالاب کا منظر پیش کررہی ہیں جہاں گاڑیاں بھی پانی میں ڈوبی ہوئی ہیں۔

فوٹو رائٹرز

دہلی حکومت نے ہنگامی صورتحال پر تمام اسکول سمیت سرکاری اور نیم سرکاری اداروں کو بھی بند رکھنے کی ہدایت کی ہے جب کہ ریسکیو اہلکار شہریوں کو محفوظ مقامات پر منتقل کررہے ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں